جب وقت آیا وہ کھو چُکا تھا ھم سے

سچ کا ساتھ اُردو شاعری

کیا وقت سے گلہ کریں اب ھم وجاہت
جب وقت آیا وہ کھو چُکا تھا ھم سے

وہ کم سخن ——– وہ کم ادا
وہ بے وفا ——— اچھا لگا

جب بھی ملا ——- روٹھا ھوا
جب بھی ملا ——- اچھا لگا

وہ ظلم میں ——- مائل بہت
وہ جبر کا ——— قائل بہت

اُس کا ستم ——- ھر اک ستم
مجھ کو سدا —— اچھا لگا

تم پیار کے ——- قابل نہیں
تم پیار کے ——- لائق نہیں

اُس نے کہا ——- ھم سے کہا
ھم نے سنا ——- اچھا لگا

اپنا تبصرہ بھیجیں