پیرمحل ؛؛زیر تعمیر لاہور کراچی موٹروے سیکورٹی گارڈز کے لیے سونے کی چڑیا بن گیا بغیر پاس موٹر وے پر سفر کرنے والوں سے سو روپے سے لے کر ایک ہزارروپے تک بھتہ وصولی شروع

پیرمحل ؛؛زیر تعمیر لاہور کراچی موٹروے سیکورٹی گارڈز کے لیے سونے کی چڑیا بن گیا بغیر پاس موٹر وے پر سفر کرنے والوں سے سو روپے سے لے کر ایک ہزارروپے تک بھتہ وصولی شروع تفصیل کے مطابق سابق دورحکومت میں سابق وزیر اعظم خاقان عباسی نے لاہور کراچی موٹروے کا افتتاح کرکے موٹروے گاڑیوں کے لیے کلیئر ہونے کا عندیہ دیا مگر چھ ماہ گذرنے کے باوجود ناگزیر وجوہات کی بناء پر لاہور کراچی موٹروے کو عام ٹریفک کے لیے کھولا نہ جاسکا عام شہری لاہور کراچی موٹروے کھلا سمجھ کر یونہی موٹروے پر سفر کرنے لگتے ہیں جگہ جگہ غیر قانونی طورپر موٹروے ملازمین کی طرف سے لگائے گئے سیکورٹی گارڈ اپنے ناکے لگاکر سو روپے سے ایک ہزارروپے فی ناکہ بھتہ زبردستی وصول کرکے آگے جانے دیتے ہیں بھتہ نہ دینے پر گاڑی مالکان کو واپس جانے پر مجبور کیاجاتاہے جس سے مجبور ہوکر گاڑی مالکان واپس جانے کی بجائے بھتہ دینے میں ہی عافیت سمجھتے ہیں اس طرح لاہور تک تقریبا درجن بھر ناکے سرعام موٹروے انتظامیہ کی ملی بھگت سے گاڑی سواروں سے بھتہ وصولی کا دھندہ اپنائے ہوئے ہیں متاثرین کا کہنا ہے حکومت پاکستان جلد سے جلد لاہور کراچی موٹروے کو کھول کر موٹر واے سیکورٹی گارڈز کی بھتہ وصولی بند کروائے جب تک لاہور موٹروے پر ٹول پلازے تعمیر نہ کیے جاسکیں لاہور کراچی موٹر وے کو عارضی پر ہرقسم کے ٹیکس فری کیاجائے تاکہ عام شہری لاہور کراچی موٹر وے کی تعمیر سے فائدہ اٹھاسکیں جبکہ لاہور کراچی موٹروے کے ذمہ داران کا کہنا ہے سیکورٹی گارڈ ز کو سامان کی حفاظت کے لیے تعینات کیا ہے اگر کوئی غیر قانونی دھندہ کرتاہے تو شکایت پر اس کے خلاف کاروائی کریں گے جب تک موٹر وے چالونہیں ہوجاتا ہرقسم کی ٹریفک کے لیے بند ہے اگر کوئی گاڑی سوار سفر کرتاہے تو کسی قسم کے حادثہ کی ذمہ داری اس کی ہوگی

اپنا تبصرہ بھیجیں